ہماری آزادی کی تاریخ |

ہماری آزادی کی تاریخ


23فروری 1987 ء کو نیو جیرسی کی سپریم کورٹ نے فیصلہ دیا کہ پلین فیلڈ چرچ ’’کرسچن سائنس‘‘کا نام استعمال کرنے کا قانونی حقدار ہے۔ اس تاریخی فیصلے نے بارہ سالہ اس قانونی جنگ کو ختم کر دیا جو ہمارے چرچ کے خلاف مسیحی سائنس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے چھیڑ رکھی تھی۔ اس فیصلے کی نسبت سے ہمارے چرچ کوپلین فیلڈ کرسچن سائنس چرچ، آزادکا نام دیا گیا۔

پلین فیلڈ چرچ کو ہراساں کرنے کا آغاز 1975ء میں ہوا جب کرسچن سائنس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے ، برانچ کے معاملات میں بورڈ آف ڈائریکٹرز کی مداخلت کرنے کے طریقہ کار کی پیروی کرتے ہوئے، یہ مانگ رکھی کہ پلین فیلڈ اپنے نہایت محترم بورڈ آف ٹرسٹیز کانئے بورڈ کے ساتھ تبادلہ کرے جو بوسٹن کے ڈائیریکٹرز کی تابعداری کا حلف اٹھانے کے خواہاں تھے۔ہمارے چرچ کے اندرونی معاملات میں اس ناجائز مداخلت کا بھرپور الفاظ میں جواب دیتے ہوئے، اراکین نے بوسٹن کی اس مانگ کو مسترد کر دیا، اور یہ اشارہ دیا کہ وہ ڈائیریکٹرز خود ان کی اپنی قیادت کے مینوئیل ، خصوصاً آرٹیکل 23، سیکشن 1 اور10، اور آرٹیکل 11، سیکشن 13 کی خلاف ورزی میں ملوث

ڈائریکٹر کی مانگ پر پلین فیلڈ چرچ کا انکار، ہمارے چرچ کو 16 جون 1977ء کے رسالہ کی فہرست سے باہر نکالنے کا موجب بنا۔ اسی وقت ہمیں ڈایریکٹرز کی جانب سے آگاہ کیا گیا کہ ہم مزید ’’کرسچن سائنس‘‘ کا نام کسی بھی صورت استعمال کرنے کے حقدار نہیں رہے۔۔

جب ہمارے چرچ نے ’’انڈیپنڈنٹ کرسچن سائنس چرچ‘‘ نام رکھا تو اس کے تین سال بعد، 1983ء میں ڈائریکٹرز ہمیں عدالت میں لے گئے اور ہمارے چرچ کی پہچان کے لئے ’’کرسچن سائنس‘‘ کی اصطلاح کا استعمال کرنے پر پابندی عائد کرتے ہوئے حکم امتناعی حاصل کر لیا۔پھر چرچ نے ’’پلین فیلڈ کمیونٹی چرچ، کرسچن سائنس کی مشق کرنے والا آزاد چرچ‘‘ کا نام اختیار کر لیا اور نیو جیرسی میں اپیلوں سے متعلق کورٹ میں چھوٹی عدالت میں اپنی درخواست دائر کی، جس نے اس حکم امتناعی کو مسترد کر دیا اور حکم دیا کہ ’’کرسچن سائنس ‘‘ ایک عام اصطلاح ہے اورخصوصاً بورڈ آف ڈائریکٹرز کا ذاتی تجارتی نشان نہیں ہے ۔ یہ فیصلہ 23 فروری 1987ء کو نیو جیرسی کی سپریم کورٹ کی جانب سے بھاری اکثریت کے ساتھ صادر کیاگیا۔ 268,000 ڈالرز کے ہمارے مکمل قانونی اخراجات کی ادائیگی چاروں جانب سے ہمارے اراکین اور حامیوں نے کی۔ 

بورڈ آف ڈائریکٹرز کے پاس 90 دن تھے کہ وہ اپنی درخواست یونائیٹڈ سٹیس سپریم کورٹ میں دائر کروا سکتے تھے۔ 90 دن سے زیادہ گزر چکے ہیں اور اس لئے، اب وہ اس معاملے میں امریکہ کی سپریم کورٹ میں اپنے حق سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ اب ہم جہاں چاہیں ’’کرسچ سائنس‘‘ کے الفاظ کو استعمال کرنے کا حق جیت چکے ہیں۔ یہ قانونی فیصلہ در حقیقت تاریخی ہے۔ اب یہ ہمارے چرچ کو ’’کرسچن سائنس‘‘ چرچ کا نام استعمال کرنے کے لئے آزاد کرتا ہے اور چرچ کی کسی بھی شاخ کے لئے ، بغیر خوف استغاثہ ، خود مختاری اور اس آزاد کام کا حق حاصل کرنے کے دروازے کھولتا ہے جس کی ضمانت مسز ایڈی نے اپنے 88ویں مینوئیل میں دی ہے، جس کا آخری شمارہ تمام تر کرسچن سائنس چرچ کی حکومتوں کیلئے ہماری قائد نے خود جاری کیا۔

آزاد ہونے سے اب تک پلین فیلڈ چرچ نے غیر معمولی ترقی اور خوشحالی کا تجربہ کیا ہے۔ ہمارے پاس بہت بڑی، وسیع رکنیت ہے، جس میں بیرون ملک و ریاست سے بھی بیشمار رکن شامل ہیں۔ شفا پلین فیلڈ چرچ کاخاصا ہے، اور شفا کا حیرت انگیز کام یہاں کئی برسوں سے جاری ہے۔جو لوگ سننے کے خواہش مند ہیں ان کے لئے ہماری تمام تر خدمات آن لائن دستیاب ہیں، براہ راست اور ریکارڈ بھی۔ہماری خدمات سے محسوس ہونے والی محبت اور خوشی کے ماحول سے متعلق زائرین اپنی رائے دیتے ہیں۔

1979ء میں ہمارے چرچ نے اپنے خود کے درسی وعظ لکھنے کا آغاز کیا ، اور1980 ء میں ہم نے خود کا آزاد سہ ماہی نامہ شائع کرنا شروع کیا جو مکمل طور پر بائبل اور میری بیکر ایڈی کی تحریر کردہ درسی کتاب، سائنس اور صحت، پر بنیاد رکھتی تھی۔ یہ سادہ شفائیہ اسباق سبسکرائیبرز کی ایک لمبی فہرست کو مہیا کئے جاتے ہیں، جن میں سے اکثر ہمیں ان اسباق کے لئے اپنی شکرگزاری سے متعلق لکھتے رہتے ہیں۔ 

مئی 1986ء میں ہم نے ہمارے چرچ کا ایک میگزین ’’شفائیہ خیالات‘‘ کے نام سے شائع کرنا شروع کیا۔ حال ہی میں، ہم نے اس میگزین کا نام ’’محبت آزاد کرنے والی ہے‘‘ رکھنا مناسب سمجھا ہے جس میں مرکزی تنظیم کی جانب سے کرسچن سائنس میں سے نکلنے والی غلط فہمیوں کو دور کرنے پر زور دیا گیا ہے۔ ہمیں دنیا بھر سے ان لوگوں کی جانب سے گرمجوش تشکر موصول ہوئے ہیں جوکرسچن سائنس کے خالص، شفائیہ ادب کے خواہاں ہیں۔ 

تحریک میں شامل چند ابتدائی کارکنان کی جانب سے کرسچن سائنس کے حوالے سے لکھی گئی بہت سی موثر تحریریں ہمارے چرچ نے شائع کی ہیں۔ اس کا تحفظ اور حلقہ اشاعت ہماری اہم سرگرمیوں میں سے ایک ہے۔

2008 ء میں ہربرٹ ڈبلیو یوسٹیس ٹرسٹ نے ہمارے چرچ کو مسٹر یوسٹیس کی شاندار کتاب ’’کرسچن سائنس اس کی واضح اور حقیقی تعلیم اور مکمل تحریر‘‘ کے مرکزی سپلائیرزکے طور پر ذمہ داری سوپنے کے لئے مناسب جانا۔ یہ ہمارے چرچ کی سالمیت اور استحکام کے لئے اعتماد کا ایک زبردست ووٹ ثابت ہوا۔ مسٹر یوسٹیس کرسچن سائنس کے عظیم کارکنان میں سے ایک تھے۔ انہیں مسز ایڈی کی جانب سے بطور پبلشنگ سوسائٹی کے ٹرسٹی نامزد کیا گیا تھا، اور انہوں نے 40 سال بطور آزاد مسیحی سائنسدان کرسچن سائنس کی تعلیم دی۔